گلستان سعدی

مصر کے شہر سکندریہ میں ایک مرتبہ قحط پڑ گیا بارش نہ ہونے کی وجہ
سے زمین بنجر ہو گئی تھی ۔ گندم کی قلت پیدا ہو گئی ۔ ہر طرف بھوک ہی بھوک پیدا
ہو گئی ۔ لوگ بہت پریشان تھے اور بھوک کی وجہ سے مرنے لگے ۔ اس شہر میں
چند برگزیدہ بزرگ اور صوفی بھی رہتے تھے اسی دوران شہر میں ہیجڑوں نے لنگر
شروع کر دیا لوگ وہاں جمع ہو جاتے اور کھانا لے جاتے تھے ۔
برگزیدہ بزرگ اور صوفی بھو ک سے نڈھال ہوئے تو ایک جگہ جمع ہو کر فیصلہ کیا
کہ ہمیں کیا کرنا چاہیے کھانا لینا ہے یا نہیں وہ شیخ سعدیؒ کے پاس گئے اور اپنا
فیصلہ پیش کیا ۔ اور شیخ سعدی نے منع کر دیااور بتایا کہ حالات جیسے بھی ہوں اپنی
عزت و نفس کو مجروح نہیں کرنا چاہیے۔
غیریت کے پہلو کو نہیں چھوڑنا ۔ حالات کا ڈٹ کر مقابلہ کریں اور سخت محنت کر
کے حالات کو درست کرنا چاہیے۔

گلستان سعدی
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments
0
Would love your thoughts, please comment.x
()
x